جمعرات 07 جولائی 2022 - 3:04:55 شام

متحدہ عرب امارات کے وفد کی ورلڈ اکنامک فورم کے سالانہ اجلاس میں شرکت


دبئی، 23 مئی، 2022 ۔۔ متحدہ عرب امارات کا ایک اعلیٰ سطح وفد جس میں متحدہ عرب امارات کے وزراء، سرکاری حکام اور نجی شعبے کے رہنما شامل ہیں ڈیووس میں 26 مئی تک ہونے والے ورلڈ اکنامک فورم کے سالانہ اجلاس میں شرکت کر رہا ہے ۔

اجلاس "تاریخ ایک اہم موڑ پر: حکومتی پالیسیاں اور کاروباری حکمت عملی" کے موضوع کے تحت منعقد کیا گیا اور اس میں 2,000 سے زائد حکومتی رہنماؤں اور عہدیداروں، فیصلہ سازوں، سوچ رکھنے والے رہنماؤں، سائنسدانوں، نجی شعبے کے رہنماؤں اور تعلیمی اداروں کی ممتاز شخصیات نے شرکت کی۔

شرکاء موجودہ اور مستقبل کے چیلنجوں کا سامنا کرنے والی حکومتوں اور نجی شعبے کی تیاری کو بڑھانے، اگلے مرحلے میں مشترکہ حکمت عملیوں کی نشاندہی کرنے اور مواقع کا ایک ایسا نظام تیار کرنے کے لیے جمع ہیں جو معاشرے کی فلاح و بہبود کے لیے کام کرے۔

کابینہ امور کے وزیر محمد بن عبداللہ القرقاوی نے کہا کہ صدر عزت مآب شیخ محمد بن زاید آل نھیان کی قیادت اور نائب صدر، وزیر اعظم اور دبئی کے حکمران عزت مآب شیخ محمد بن راشد آل مکتوم کی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے متحدہ عرب امارات نے بین الاقوامی کانفرنسوں اور فورمز میں اپنی عالمی موجودگی کو فروغ دیا ہے تاکہ اگلے 50 سالوں کے اپنے منصوبوں کو اجاگر کیا جاسکے اور مرحوم شیخ خلیفہ بن زاید آل نھیان کے بااختیار بنانے کے مرحلے کے دوران اپنی کامیابیوں کو پیش کیا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کی قابل ذکر شرکت عالمی تعاون کو فروغ دینے اور مستقبل کے لیے حکومتوں کی تیاری کو بڑھانے اور معاشروں میں روزگار کو بہتر بنانے کے لیے نئے کام کے ماڈل ڈیزائن کرنے کے لیے قیادت کی خواہش کا تعین کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کی حکومت اور ورلڈ اکنامک فورم کے درمیان غیر معمولی تعلقات دو دہائیوں سے زیادہ پر محیط ہیں۔

اس کا آغاز 2001 میں ڈیووس میں منعقدہ اجلاس میں عزت مآب شیخ محمد بن راشد آل مکتوم کی تقریر سے ہوا جنہوں نے سٹریٹجک شراکت داری کے لیے ایک واضح راستہ نکالا۔ اس نے مستقبل کی تشکیل کی بنیاد رکھی اور جامع عالمی ترقی کو فروغ دیا ۔

اس تاریخی شراکت داری کا مقصد بنیادی طور پر ان شعبوں میں مثبت تبدیلی لانا ہے جن کا تعلق انسانیت اور مستقبل سے ہے۔

ورلڈ اکنامک فورم ان اہم پلیٹ فارمز میں سے ایک ہے جو اہم شعبوں کو درپیش چیلنجوں کا جائزہ لیتا ہے اور حکومتوں، فیصلہ سازوں، کاروباری شخصیات، نجی شعبے کے رہنماؤں کے درمیان مستقبل کی سمتوں کے بارے میں نظریات، تجربات اور خیالات کے تبادلے کے ذریعے ایک مربوط ایجنڈا تیار کرنے کی کوشش کرتا ہے۔

متحدہ عرب امارات کی حکومت عالمی اسٹریٹجک شراکت داری کی تشکیل اور مستقبل کی تشکیل میں ورلڈ اکنامک فورم کے ایجنڈے میں ہر سال شرکت کرنے کی خواہاں ہے۔

متحدہ عرب امارات میں گلوبل فیوچر کونسلز کے سالانہ اجلاسوں کی میزبانی کے ذریعے اس بات کو خاص طور پر اجاگر کیا گیا ہے جو انضمام کو فروغ دینے اور مجموعی طور پر انسانیت کی بھلائی کے لیے مشترکہ طور پر کام کرنے کیلئے دانشمندانہ قیادت کے وژن کے مطابق ہے۔

ترجمہ: ریاض خان ۔

http://wam.ae/en/details/1395303050081

WAM/Urdu