بدھ 01 فروری 2023 - 6:52:49 صبح

متحدہ عرب امارات کی تمام شعبوں میں پاکستان کی امداد کو سراہتے ہیں:وزیر اعظم شہبازشریف


ابوظہبی، 20 جنوری، 2023 (وام) ۔۔ وزیر اعظم شہباز شریف نے متحدہ عرب امارات کے تاجروں پر زور دیا ہے کہ وہ پاکستان میں موجود بے پناہ مواقع سے استفادہ کریں، جو کہ 22کروڑ سے زائد آبادی کی مارکیٹ اور سرمایہ کاروں کو ایک مضبوط اور بڑی صارف مارکیٹ پیش کرتا ہے۔

خلیج ٹائمز کو ایک انٹرویو میں وزیر اعظم شہبازشریف نے کہا کہ انرجی، انفراسٹرکچر، ای کامرس، ایگرو بیسڈ انڈسٹری اور آئی ٹی کے شعبے بے شمار مواقع پیش کررہے ہیں۔

اپریل 2022 میں عہدہ سنبھالنے کے بعد شہبازشریف کے متحدہ عرب امارات کے تیسرے دورے کے دوران انسانی اسمگلنگ سے نمٹنے، معلومات کے تبادلے اور دونوں ممالک کی سفارتی اکیڈمیوں کے درمیان تعاون کے شعبوں میں مفاہمت کی تین یادداشتوں پر دستخط ہوئے۔

یو اے ای اور پاکستان کے تجارتی تعلقات کے بارے ایک سوال پر شہبازشریف نے اپنی حکومت کی طرف سے جاری کردہ سرکاری اعدادوشمار کا حوالہ دیا، جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ متحدہ عرب امارات کے ساتھ اس کی دوطرفہ تجارت پچھلے سال کے مقابلے 2021-22 کے دوران 25.40 فیصد اضافہ کے ساتھ 10.60 بلین ڈالر تک پہنچ گئی ہے۔

تاہم، وزیر اعظم نے کہاکہ دو طرفہ تجارت کی موجودہ سطح اب بھی صحیح عکاس نہیں ہے.

انہوں نے کہا کہ ہم اپنے موجودہ اقتصادی، تجارتی اور سرمایہ کاری کے تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

اخبار کے مطابق دونوں ممالک کے درمیان اوسطاً سالانہ تجارت 8 ارب ڈالر ہے جس سے متحدہ عرب امارات مینا کے خطے میں پاکستان کا سب سے بڑا تجارتی پارٹنر ہے۔

تعاون کے نئے شعبوں کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں شہباز شریف نے کہا،کہ ہم اپنے اقتصادی تعلقات کو اپنے بہترین سیاسی تعلقات کے برابر لے جانے کے لیے اقتصادی تعاون کی نئی راہیں تلاش کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی)، مصنوعی ذہانت (اے آئی)، اور فنانشل ٹیکنالوجی (فن ٹیک) کے شعبوں میں تعاون کی بہت زیادہ صلاحیت موجود ہے۔

پاکستان میں سیلاب زدگان کے لیے متحدہ عرب امارات کی امداد کے بارے میں ایک سوال پر وزیر اعظم نے سیلاب سے متاثرہ لوگوں کے لیے "قیمتی اور بروقت" امداد پر متحدہ عرب امارات کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے بتایا کہ جس دن پاکستان میں سیلاب آیا، مجھے عزت مآب شیخ محمد بن زاید نے فون پر بتایا کہ ہم سیلاب سے متاثرہ علاقوں کے لیے فوری طور پر امدادی سامان بھیجنا شروع کر رہے ہیں۔

اور پھر ابوظہبی اور پاکستان کے درمیان ایک فضائی امداد کا پل قائم کیا گیا، اور امدادی سامان اسلام آباد سندھ کے شہروں کراچی، بدین، شکارپور بھیجا گیا۔

متحدہ عرب امارات اور پاکستان کی دوستی کے حوالے سےانہوں نے کہا کہہ تعلقات کی بنیاد مرحوم شیخ زاید بن سلطان آل نھیان نے رکھی تھی، جو چاہتے تھے کہ پاکستان کا شمار سرکردہ، خوشحال اور ترقی یافتہ ممالک میں ہو۔ ہم ان کی فیاضی اور سخاوت کو کبھی نہیں بھولیں گے۔

شہباز شریف نے پاکستانی تارکین وطن کی فلاح و بہبود پر متحدہ عرب امارات کی حکومت اور اس کی قیادت کا شکریہ ادا کرتے کہا کہ متحدہ عرب امارات 17لاکھ پاکستانیوں کی عزت اور احترام کے ساتھ اپنے ملک میں روزگار کے لیے میزبانی کررہا ہے۔

نومبر 2023 میں ہونے والی اقوام متحدہ کی موسمیاتی تبدیلی کانفرنس (کاپ28) کے حوالے سے پاکستانی وزیر اعظم نے اس اہم ایونٹ کے انعقاد میں متحدہ عرب امارات کی کامیابی کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اپنی موسمیاتی سفارت کاری کے حصے کے طور پر، پاکستان عالمی سطح پر موسمیاتی تبدیلی پر بحث، مذاکرات اور عمل کےلیے تعمیری طور پر تعاون جاری رکھے گا۔

ترجمہ۔تنویرملک

http://wam.ae/en/details/1395303121022

Farrukh Tanveer Malik